محترمہ ثبین سیف

وقارِ سخن میں خوش آمدید
—————————————–
ایک شام ایک شاعرہ
—————————————–
شاعرہ کا نمائندہ شعر
—————————————–
پہلے ڈرتی تھی اک پتنگے سے
ماں ہوں اب سانپ مار سکتی ہوں

محترمہ ثبین سیف
—————————————–
ایک شام ایک شاعرہ
—————————————–
بات کیا ہے یہ بتائیں تو سہی
گفتگو آگے بڑھائیں تو سہی
—————————————–
جان جائیں گے کھرا کھوٹا ہے کیا
آپ مجھ کو آزمائیں تو سہی
—————————————–
میں تو اب خود سے مِل نہیں پاتی
مجھ کو میرا پتا بتا دیجے
—————————————–
کہنے کی حد تلک توچلو ٹھیک ہے مگر
عہدِ وفا بھی کوئی نبھانے کی چیز ہے
—————————————–
اپنی آنکھوں میں سُرمہ لگاتے ہوئے
گنگناتی رہی آپ کی شاعرہ
—————————————–
آپ میرے ہیں یا زمانے کے
کیوں کوئی فیصلہ نہیں کرتے
—————————————–
لکھّا ہے اپنے نام سے اپنے پتے پہ خط
مدّت کے بعد اپنی خبر چاہتی ہوں میں
—————————————–
ایک بس تجھ کو جیتنے کے لئے
میں نے ہاری ہے جان کی بازی
—————————————–
آپ دانستہ جو کترا کے گزر جاتے ہیں
میرے احساس میں سو درد اُتر جاتے ہیں
—————————————–
پاس آ کر بھی اگر پاس نہ آئے کوئی
ہم شبِ وصل کی تنہائی میں مر جاتے ہیں
—————————————–
کیا عجب دورِ پُر آشوب ہے جس میں اے دوست!
لوگ دستار بچاتے ہیں تو سَرجاتے ہیں
—————————————–
زندہ دفنائی جاتی ہے عورت
جب بھی مرضی سے سانس لیتی ہے
—————————————–
بہت سمجھا رہی ہوں دل کو لیکن
بغاوت پر بغاوت کر رہا ہے
—————————————–
ہے بدل دنیا میں ہر اک چیز کا
پیار کا نعم البدل کوئی نہیں
—————————————–
مجھے جس شخص سے نفرت بہت تھی
اسی سے یہ محبت کر رہا ہے
—————————————–
دوست ہیں آپ میرے دیرینہ
آپ کا حق ہے اختلاف کریں
—————————————–
جو بھی کہنا ہے میرے منہ پہ کہیں
گفتگو مت مرے خلاف کریں
—————————————–
اچھّا کیا کہ آپ نے مسمار کر دیا
اب اپنے آپ کو میں دوبارہ بناوُں گی
—————————————–
باغ میں لوٹ مار جاری ہے
پھول اپنے سنبھال کر رکھنا
—————————————–
دل کو تسبیح تو دھڑکن کو بنا کر دانے
نامِ محبوب وضو کر کے لیا جاتا ہے
—————————————–
اپنی ہستی کی خبر ہی نہیں رہتی کوئی
صرف محبوب کی سانسوں میں جیا جاتا ہے
—————————————–
آپ اس بار بھی دیوار میں چُنا دیں مجھے
اب کے بھی سر یہ جھکایا تو نہیں جا سکتا
—————————————–
تم نے اک عمر مرے دل پہ حکومت کی ہے
تم کو پل بھر میں بھلایا تو نہیں جا سکتا

محترمہ ثبین سیف
—————————————–

وقارِ سخن میں خوش آمدید

FACEBOOK PAGE: www.facebook.com/waqaresukhan
WEBSITE LINK: www.mianwaqar.com/waqaresukhan